Jis Dhaj Se Koi Maqtal Mein Gaya جس دھج سے کوئی مقتل میں گیا


Mufti Muhammad Asghar Khan Kashmiri
پتھر مارو، دار پہ کھینچو، مرنے سے انکار نہیں
یہ بھی سن لو حق کی آخر جیت ہی ہوگی ہار نہیں

اپنے خون جگر سے ہم نے کچھ ایسی گلکاری کی
سب نے کہا یہ تختہ گل ہے یہ تو تختہ دار نہیں

باغ کا نقشہ بدلو یا پھر چھین لو ہم سے تاب نظر
سب کچھ دیکھیں کچھ نہ کہیں ہم اس کے لئے تیار نہیں
طوفاں طوفاں گھوم چکے ہیں ساحل ساحل دیکھ آئے
مرنا جینا کھیل ہے یارو، کھیل کوئی دشوار نہیں

Jis Dhaj Se Koi Maqtal Mein Gaya

Explore Hassan on Net

Interest of Hassan

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s